• پیر , 20 مئی 2019

سعودی عرب میں ایک خونخوار وہابی نے 6 سالہ شیعہ بچے کو ذبح کرنے کے بعد ٹکڑے ٹکڑے کردیا

سعودی عرب کے ذرائع ابلاغ نے سعودی عرب میں ایک وہابی خونخوار کے ہاتھوں 6 سالہ شیعہ بچے کو ذبح کرنے اور ٹکڑے ٹکڑے کرنے کے واقعہ کے بعد سعودی عرب کو ذبح کرنے اور ٹکڑے ٹکڑے کرنے والے خونخوار وہابی قاتلوں کی سرزمین قراردیدیا ہے۔


سعودی عرب کے ذرائع ابلاغ نے سعودی عرب میں ایک وہابی خونخوار کے ہاتھوں 6 سالہ شیعہ بچے کو ذبح کرنے اور ٹکڑے ٹکڑے کرنے کے واقعہ کے بعد سعودی عرب کو ذبح کرنے اور ٹکڑے ٹکڑے کرنے والے خونخوار وہابی قاتلوں کی سرزمین قراردیدیا ہے۔

سعودی عرب کے ذرائع کے مطابق گذشتہ ہفتہ سلطان بن عبدالعزیز روڈ پر اس وقت رونما ہوا جب زکریا الجابراور اس کی کی ماں کا تعلق الاحساء سے تھا انھوں نے مدینہ منورہ میں پیغمبر اکرم (ص) کی زیارت پر جانے کے لئے ایک گاڑی کرائے پرلی ۔ گاڑی پر سوار ہوتے ہوئے زکریا الجابر کی ماں نے ” بسم الله الرحمن الرحیم توکلنا علی الله، اللهم صل علی محمد و اله” کہا ، ڈرائیور نے اس زکریا کی ماں سے پوچھا تم شیعہ ہو جب عورت نے جواب مثبت دیا تو ڈرائيور آگ بگولہ ہوگيا ۔ ڈرائيور نے کچھ دیر بعد گاڑی کو ایک جگہ روکا اور بچے کو ماں کی آغوش سے زبردستی چھین لیا ۔ سعودی عرب کے خونخوار وہابی ڈرائيور نے 6 سالہ زکریا الجابر کو ماں کے سامنے ذبح کرکے ٹکڑے ٹکڑے کردیا ۔ یہ وحشیانہ اور دردناک واقعہ دیکھنے کے بعد ماں بیہوش ہوگئی ۔ اس خاتون نے راستہ چلنے والے مسافروں سےمدد طلب کی لیکن کسی نے اس کی مدد نہ کی۔

الاسرار الاسبوع کے مطابق سعودی عرب میں زکریا الجابر اور جمال خاشقجی جیسے درجنوں افراد کو ذبح کرنے کے بعد ٹکڑے ٹکڑے کردیا گیا اور انسانی حقوق کی عالمی تنظیمیں سعودی عرب میں ہونے والے سنگين اور بھیانک جرائم پر خاموش تماشائي بنی ہوئی ہیں۔

Related Posts